Deutsche / Roman Urdu / کالم ایڈئٹر / چنگاری فورم / آئی ایم ٹی نیوز / کتابیں / مارکسی تعلیم / ادبی سنگت / عورتیں/ نوجوان / مزدور تحریک / انٹرنیشنل / لاطینی امریکہ / مشرق وسطی / یورپ / ایشیا / پاکستان /
پاکستان کے بکھرتے خونی لتھڑے
پاک فوج کی طرف سے حالیہ ضرب عضب کی کامیابی اور فتح کے لیے کی گئی پریس کانفرنس کی بازگشت ابھی تھمی بھی نہیں تھی کہ پاکستان ایک بار پھر خون میں ڈوب گیا ۔ جو حکمرانوں ، فوجی جرنیلوں اور ریاست کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے
ٹرمپ کا انتشار
اب امریکی ریاست اور اس کے سنجیدہ حکمرانوں کے پاس صرف ایک ہی راستہ ہے کہ وہ ٹرمپ کو روکیں یا اسے راستے سے ہٹا دیں یا پھر اپنی بربادی کا تماشا خود دیکھیں
پیش لفظ .کتاب ،، جلتا گوبل
انسانی کرہ ارض کو عالمی حکمرانوں نے دوسری عالمی جنگ کے بعد آج کسی تیسری عالمی جنگ کی عدم موجودگی میں نام نہاد امن اور جمہوریت کے نام پرسب سے زیادہ لوگوں کا قتل عام ، قحط ، سب سے بڑی ہجرتیں ، ملکوں اور خطے کی تباہی اور خون میں ڈبو دیا ہے
علم و ادب پر رجعت کی یلغار
اور ایسا لگتا ہے کہ اللہ کو مانے سے قتل کا لائسنس مل جاتا ہے اور مسلمان ہونے سے دوسروں کو کافر اور اقلیت کہنے کا حق مل جاتا ہے جو جہالت اور غیر انسانی سوچ کا اعکاس ہے
جموں کشمیر نیشنل اسٹوڈنٹس فیڈریشن کی پچاس سالہ جدوجہد کے اسباق
طلبہ تنظیم سے بڑھ کر یہ نوجوانوں کی ایک سیاسی درسگاہ اور تجربہ گاہ رہی ہے۔ کسی عوامی جماعت کی سر پرستی کے بغیر ہی یہ تنظیم نصف صدی تک پھیلے ہوئے طویل عرصے پر محیط عروج و زوال کی ایک دلچسپ اور سبق آموز داستان اپنے دامن میں سمیٹے ہوئے ہے
پیش لفظ ۔ کس کا پاکستان
انیس سو سنتالیس میں جن آنکھوں نے آزادی ، امن اور خوشحالی کا خواب دیکھا تھا آج پتھرا چکی ہیں یا پھر خون کے آنسو رو ر رہی ہیں ۔ پاک سر زمین کے لیے جدوجہد کرنے والے آج اپنی جدوجہد سے شرمندہ ہیں
ٹرمپ کی جیت۔ معجزات کے دور کا آغاز
ہمیشہ کی طرح اس بار بھی ایک طرف بڑا بدمعاش (ٹرمپ)اور دوسری طرف چھوٹی بدمعاش( ہلیری) تھی ۔ عوام ہر بار چھوٹے بدمعاش کو ووٹ دیکر دیکھ چکے تھے اس لیے انہوں نے اس بار روٹین ازم کے خلاف ووٹ دیا
پی ٹی آئی ۔ ریاستی اداروں کی بے اعتباری پر اعتبار
موجودہ نطام میں اور اسکی عدالتوں میں فیصلے انصاف کے مطابق نہیں بلکہ ضرورت کے مطابق ہوتے ہیں ۔ یہ وہی عدالتیں ہیں جنہوں نے منتخب وزیر اعظم کو پھانسی دی اور ہر فوجی آمریت اور عوام پر ہر بربریت کو عین قانون اور عین آئین قرار دیا
شام، عراق اور سامراجی منافقت
سفارتکاری کے دو مقاصد ہیں: ایک یہ کہ جنگ کے اصل محرکات اور عزائم کی اپنی عوام سے پردہ پوشی کی جائے اور دوسرا جنگ کی تمام ہولناکی اور جرائم کا ملبہ دوسروں پر ڈال دیا جائے۔
یورپی اتحاد کو خطرہ http://www.classic.chingaree.com/products/1456239514_EU01.jpg
محنت کش عوام کی خوشحالی ہی یورپ کے اتحاد اور استحکام کی ضمانت ہے جو سرمایہ داری کے تحت اب ممکن نہیں ہے۔ یورپ کے اتحاد اور استحکام کو منڈی کے نظام سے خطرہ ہے مہاجرین سے نہیں
مزید آرٹیکل

نوجوان

ملتان: دو روزہ مارکسی سکول سرما 2017ء کا انعقاد
کشمیر سے لے کر کراچی تک ملک بھر سے نوجوان سخت معاشی مسائل کو شکست دیتے ہوئے انقلابی عزم کے ساتھ ملتان پہنچے۔ سکول میں فاٹا سے آئے ہوئے نوجوان بھی موجود تھے۔
تدریسی مزدور اور تعلیم
سکولوں کے مالک اکثر اوقات ان پڑھ یا نیم خواندہ لوگ ہوتے ہیں۔ اور اگر کوئی پڑھا لکھا ہو بھی تو ضروری نہیں کہ وہ تعلیم جیسے نازک معاملات کے بارے کوئی آگاہی رکھتا ہو
ملتان: اسکولوں کی نجکاری کے خلاف اساتذہ کا احتجاج
یونائٹیڈ ٹیچرز کونسل پنجاب نے پورے صوبے میں سکولوں کی نجکاری، پے سکیل اپ گریڈیشن اور حکومت کی اساتذہ مخالف پالیسیوں کے خلاف احتجاجی تحریک کاآغاز کیا ہے
« بی ایس او پجار کے رہنما میر ظریف رند کے گھر پر حملہ، چھوٹا بھائی شہید، پروگریسو یوتھ الائنس کی شدید مذمت
پروگریسو یوتھ الائنس اس بزدلانہ حملے کی شدید مذمت کرتی ہے اور حکومت سے یہ مطالبہ کرتی ہے کہ حملہ کرنے والے خونخوار قاتلوں کو فوری گرفتار کر کے کیفر کردار تک پہنچایا جائے
« انٹرمیڈیٹ کا ناقص رزلٹ: حق کے لئے کیسے لڑا جائے؟
ہور سے شروع ہونے والے مظاہرے جنگل کی آگ کی طرح پورے پنجاب میں پھیل گئے اور نوجوان اس کھلی ناانصافی اور ظلم کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے
« جموں کشمیر نیشنل سٹوڈنٹس فیڈریشن: جدوجہد کے پچاس برس
ہم یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ پروگریسیو یوتھ الائنس این ایس ایف کی جدوجہد کو عالمی سوشلسٹ انقلاب کی جدوجہد کا اٹوٹ انگ سمجھتا ہے
« تعلیم کی تباہی
موسم گرما کے ان چند مہینوں میں تعلیمی اداروں کی خوب چاندی ہوتی ہے۔ بھاری فیسوں اور انٹری ٹیسٹوں کے نام پر خوب مال بنایا جاتا ہے۔
« نوجوان: یہ چنگاری پھر بھڑکے گی
نوجوانوں میں یہ مایوسی بیگانگی میں تبدیل ہو جاتی ہے اس وجہ سے ہمیں اپنے عہد کی نوجوان نسل سیاسی اور معاشرتی بیگانگی کا شکار نظر آتی ہے
« جنوبی افریقہ: فیسوں میں اضافے کے خلاف طلبہ تحریک کی فتح
فیس کم کرو‘ تحریک نے صدر کے ساتھ بند کمرے میں ملاقات سے انکار کر دیا تھا۔ یہ تحریک کی حکومت اور مقتدر لوگوں پر عدم اعتماد کی واضح نشانی ہے۔

مزید پڑھیں

مطبوعات